بریکنگ نیوز
بھارتی فوج کے ہاتھوں 24 گھنٹوں کے دوران 4 کشمیری نوجوان شہید یوکرین کا کریمیا پر حملے میں 9 روسی لڑاکا طیارے تباہ کرنے کا دعویٰ روس یوکرین جنگ؛ بنگلادیش میں پیٹرول تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا غزہ پر اسرائیلی بمباری کا دوسرا روز، بچوں سمیت 24 فلسطینی شہید کابل میں جلوس کے دوران دھماکہ، آٹھ افراد جاں بحق اسرائیل کی غزہ پر وحشیانہ بمباری میں 10 فلسطینی شہید منکی پاکس انفیکشن، امریکہ نے ہیلتھ ایمرجنسی نافذ کر دی جزیرہ فرسان میں دوسری اور تیسری صدی عیسویں کے آثارِ قدیمہ دریافت نینسی پلوسی دورہ تائیوان، چین کی جنگی مشقوں کے باعث تائیوان کے لیے پروازیں بند وسطی جاپان میں طوفانی بارشیں، عوام سے محتاط رہنے کی اپیل بینک آف انگلینڈ نے شرح سود میں تاریخی اضافہ کردیا ٹھنڈے چپس دینے پر نیویارک میں شہری نے فاسٹ فوڈ کمپنی کے ملازم کو گولی ماردی امریکی اسپیکر کا دورہ تائیوان، چین نے بحری مشقیں شروع کر دیں عمرہ زائرین کیلئے اچھی خبر، پی سی آر ٹیسٹ اور کورونا ویکسین سرٹیفکیٹ پیش کرنے کی شرط ختم عراق کے سیاسی بحران پر اقوام متحدہ کی تشویش امریکی ڈرون حملے میں ایمن الظواہری کی ہلاکت، افغان نائب وزیراعظم کی مذمت اردن، ناکارہ گردے کے بجائے تندرست گردہ نکالنے والا ڈاکٹر گرفتار بھارت کے دارالحکومت نیو دہلی میں کورونا سے 5 اموات عمان میں طوفانی بارش سے 16 افراد جاں بحق، کئی لاپتہ امریکی ایوانِ نمائندگان کی اسپیکر نینسی پلوسی کا سیاسی پس منظر تائیوان، نینسی پلوسی کی صدر سائے انگ وین سے ملاقات، چین میں امریکی سفیر طلب بھارت میں رات کی تاریکی کا فائدہ اُٹھاتے ہوئے سرکاری غنڈوں نے مسجد کو شہید کردیا یوکرین سے اناج سے لدا پہلا کارگو جہاز استنبول پہنچ گیا ایمن الظواہری کی ہلاکت، امریکا کا اپنے شہریوں کو ممکنہ خطرے سے محتاط رہنے کی ہدایت امریکی سی آئی اے نے ایمن الظواہری پر حملے کا منصوبہ کیسے بنایا ؟

ازبکستان، خود مختار صوبے میں ہنگامے پھوٹ پڑے، 18 افراد ہلاک

ازبکستان کے خودمختار صوبے قرا‌قل پاقستان میں مجوزہ آئینی ترامیم کے خلاف ہنگامے پھوٹ پڑے ہیں۔ ہنگاموں میں 18 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں۔

ازبک حکام کے مطابق خود مختار صوبے قراقل پاقستان میں مجوزہ آئینی ترامیم کے خلاف ہنگامے پھوٹ پڑے جس کے نتیجے میں 18 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ شمال مغربی صوبے کے دارالحکومت نوکوس میں ان ہنگاموں کا آغاز تازہ آئینی ترامیم سے صوبے کی خودمختاری ختم ہو جانے کی خبر سے ہوا تھا۔

نیشنل گارڈ آفس کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ان احتجاجی مظاہروں کے دوران تقریباﹰ 243 افراد زخمی بھی ہوئے ہیں جبکہ 516 افراد کو گرفتار کیا گیا تھا۔

 حکام کے مطابق گرفتار ہونے والے زیادہ تر مظاہرین کو رہا کر دیا گیا ہے۔

قبل ازیں، ازبک صدر شوکت میرضیایف نے اس پرتشدد احتجاج کے بعد قراقل پاقستان کی خودمختاری سے متعلق آئینی آرٹیکل میں ترمیم کرنے کا منصوبہ فی الحال واپس لے لیا ہے۔ دوسری جانب،  ازبک پارلیمان نے بھی اس حوالے سے مزید دس دن بحث جاری رکھنے کے حق میں ووٹ دیا ہے۔ اب اس حوالے سے بحث 15 جولائی تک جاری رہے گی۔

 

واضح رہے،  نئے آئین میں قرا‌قل پاقستان کی آئینی حیثیت میں تبدیلی کے ساتھ ساتھ مدت صدارت پانچ برس سے بڑھا کر سات برس کرنے کی تجویز پیش کی گئی ہے۔ اس ترمیم سے سب سے زیادہ فائدہ موجودہ ازبک صدر شوکت میرضیایف کو ہو گا۔ بطور اصلاحات پسند وہ اپنے سخت گیر پیشرو اسلام کریموف کی کچھ پالیسیوں کو تبدیل کرنا چاہتے ہیں۔ اسلام کریموف کا انتقال سنہ 2016ء میں ہوا تھا اور تب شوکت میرضیایف اُن کے وزیراعظم تھے۔

احتجاجی مظاہروں کے آغاز کے بعد سے شوکت میرضیایف دو مرتبہ خودمختار صوبے کا دورہ کر چکے ہیں۔ انہوں نے مظاہرین پر حکومتی عمارات  پر قبضہ کرنے کا بھی الزام عائد کیا ہے۔

یاد رہے، صوبے قرا‌قل پاقستان کا نام یہاں آباد قراقل پاق لوگوں کی وجہ سے ہے۔ دو ملین آبادی والے اس علاقے میں اب یہ لوگ اقلیت میں ہیں۔

اپنی رائے کا اظہار کریں